رسائی

ٹیکسٹ سائیز

رنگوں کے اختایارات

مونوکروم مدھم رنگ گہرا

پڑھنے کے ٹولز

علیحدگی پیمائش
keyboard search button computer internet
keyboard search button computer internet

Image: Shutterstock

رپورٹنگ

موضوعات

صحافیوں کی زندگیوں کو آسان بنانے کے لیے 5 آن لائن سرچ ٹولز

یہ مضمون ان زبانوں میں بھی دستیاب ہے

keyboard search button computer internet

تصویر: شٹر سٹاک

انٹرنیٹ تلاش کی ماہر اور مصنف تارا کیلیشین نے جاوا سکرپٹ کا استعمال ٹولز کا ایک مجموعہ بنانے کے لیے کیا جو تحقیق کرنے والے صحافیوں کا وقت بچاتے ہیں۔ یہاں، وہ بتاتی ہیں کہ ان میں سے پانچ تکنیکی ٹولز کیسے کام کرتے ہیں۔ یہ پوسٹ پہلے آن لائن جرنلزم بلاگ پر شائع ہوئی تھی اور اجازت کے ساتھ یہاں دوبارہ پرنٹ کی گئی ہے۔

مجھے "انٹرنیٹ ریسرچ کے لیے آفیشل نیٹ نیٹ سکیپ گائیڈ: ونڈوز اور میکنٹوش کے لیے” لکھے ہوئے 25 سال سے زیادہ ہو چکے ہیں (اور اپنا بلاگ ریسرچ بز شروع کئے 24 سال ہو چکے ہیں)، لیکن سرچ انجن اور انٹرنیٹ پر چیزوں کو تلاش کرنے کا مسئلہ میرے لئے اب بھی اتنا ہی دلچسپ ہے۔ اس موسم گرما میں میں نے تلاش کے چیلنجوں کے بارے میں سوچنے کے بجائے ان کو حل کرنے کی کوشش کرنا شروع کی — اور ان کو کم کرنے کے لیے تکنیکوں پر کام کرنا شروع کیا۔

کیا بدلا؟ میں نے جاوا سکرپٹ سیکھنا شروع کیا۔ میں نے مئی میں سکل شیئر کلاس میں کچھ وقت گزارا، جون میں گِٹ ہب اکاؤنٹ شروع کیا، اور یوم مزدور تک میرے پاس تقریباً 20 کا مجموعہ تھا جسے میں ریسرچ بز سرچ گزموس کہہ رہی ہوں۔ یہ سب سرچ گزموس ڈاٹ کام پر آزادانہ طور پر دستیاب ہیں۔ ان میں سے کچھ کو اے پی آئی کیز کی ضرورت ہوتی ہے، لیکن کیز بھی مفت ہیں۔ یہ صحافیوں کے لیے سب سے زیادہ کارآمد سرچ ٹولز ہیں:

ہدف شدہ پس منظر کی تحقیق: گاسپ مشین

گاسپ مشین کسی بھی موضوع کے لیے وکی پیڈیا پیج (2017  سے اب تک) ممکنہ "خبروں کے دنوں” کو منظر عام پر لانے کے لیے پانچ سال سے زیادہ صفحوں کے ویوز استعمال کرتی ہے۔ یہ صفحہ کے ملاحظات کی روزانہ اوسط پیدا کرکے اور پھر ان تاریخوں کو فلیگ کرتی ہے جن میں اس اوسط کے 150% اور 190% کے درمیان ٹریفک تھا (اس ترتیب پر منحصر ہے جو آپ استعمال کرتے ہیں)۔ اس کے بعد یہ ان تاریخوں کے لیے گوگل نیوز اور گوگل ویب سرچ لنکس پیش کرتی ہے تاکہ آپ اپنے موضوع کے لیے سیدھے (امید کے طور پر مفید) گوگل سرچ پر جا سکیں۔

"مارگریٹ آرٹ ووڈ” اور 2021 کی تلاش، مثال کے طور پر، چار تاریخوں کو سامنے لاتی ہے۔ پہلے گوگل سرچ لنک پر کلک کرنے سے سی بی سی نیوز کے اس دن شائع ہونے والے انٹرویو سے دو ویڈیو کلپس سامنے آتے ہیں۔ "اولمپکس” اور 2019 کی تلاش (وہ سال جب اس کا انعقاد نہیں کیا گیا تھا)،آپ کو 24 جون کی تاریخ دیتا ہے: متعلقہ تلاش کا لنک آپ کو ایسے نتائج تک لے جاتا ہے جس سے آپ سمجھ سکتے ہیں کہ اس نے یہ تاریخ کیوں دی۔ اس تاریخ کو اعلان کیا گیا تھا کہ اٹلی 2026 میں سرمائی کھیلوں کی میزبانی کرے گا۔

یہ ٹول ان صفحات کے لیے بہترین کارکردگی کا مظاہرہ کرتا ہے جو ایک دن میں 7,000 سے زیادہ ویوز حاصل کرتے ہیں، لیکن اس سے کم ہونے کے باوجود بھی یہ قابل ذکر خبروں کی تاریخوں کو کھوجنے میں بہت اچھا کام کرتا ہے۔

مختلف تلاشوں کی ٹائپنگ میں وقت کی بچت کریں: کارلز نیم نیٹ

کارلز نیم نیٹ ایک نام اور اختیاری کلیدی الفاظ لیتا ہے، نام کی مختلف ہجے یا لکھنے کے طریقےکار کا ایک سیٹ تیار کرتا ہے، اور گوگل،گوگل بکس، گوگل سکالر، اور انٹرنیٹ آرکائیو کے لیے سرچ میں ان کی یو آر ایلز قسموں کو بناتا ہے۔ مثال کے طور پر، اگر آپ "جان پال اسمتھ” ٹائپ کرتے ہیں تو آپ کو تلاش کے لنکس ملیں گے — ان میں سے ہر ایک پلیٹ فارم کے لیے — جو مشترکہ نتائج کے لیے:

  • جان اسمتھ
  • سمتھ جان پال
  • جے پی سمتھ، وغیرہ۔

گوگل سرچز کے لیے، یہ تلاش کے دو سیٹ بناتا ہے: ایک نام کو لکھنے کے عام طریقے سے اور پھر اسی نام کو لھنے کے مختلف طریقے کار کے لیے، اور ایک غیر معمولی کے لیے۔ اگر آپ درمیانی نام کی وضاحت نہیں کرتے ہیں، تو آپ کو ہر وسائل کے لیے نام کی تلاش کا صرف ایک سیٹ ملے گا۔ انٹرنیٹ آرکائیو کے لیے، ہر نام کو اس کا اپنا یو آر ایل سرچ ملتا ہے۔ یہ غیر معمولی جگہوں سے نتائج کے ایک گروپ کو نکالنے کا ایک تیز طریقہ ہے۔ (عام طور پر چھپے ہوئے تلاش کے نتائج کا دیکھنے کے لیے اینٹی بلز آئی نام تلاش کو آزمائیں۔)

ایک مطلوبہ لفظ آر ایس ایس الرٹ بنائیں: کیبیرفیگ آر ایس ایس جنریٹر

میں پختہ یقین رکھتی ہوں کہ ریئلی سمپل سنڈیکیشن (آر ایس ایس) انٹرنیٹ پر سب سے کم شرح شدہ ٹیکنالوجی ہے۔ میں روزانہ آر ایس ایس فیڈ استعمال کرتی ہوں اور میں ان کے بغیر ریسرچ بز تیار نہیں کر سکتی  تھی۔ کیبرفیگ بنگ، گوگل نیوز، ریڈٹ، اور ورڈ پریس سمیت تقریباً ایک درجن وسائل کے لیے مطلوبہ الفاظ پر مبنی آر ایس ایس فیڈز (آر ایس ایس فیڈز کسی مطلوبہ الفاظ کے لیے کسی مخصوص سائٹ کی تلاش) تیار کرتا ہے۔

امریکہ کی یونیورسٹی کے صفحات کو ان کی خصوصیات کی بنیاد پر تلاش کریں: سپر ای ڈی یو تلاش

گوگل کی سائٹ:ای ڈی یو سرچ موڈیفائر آپ کے تلاش کے نتائج کو فوری طور پر مزید بھرپور اور مستند بنانے کا ایک بہترین طریقہ ہے، لیکن اضافی پیرامیٹرز کے ساتھ اس کو مزید فلٹر کرنے کی کوشش کرنا مایوس کن ہے۔ سپر ای ڈی یو سرچ امریکی محکمہ تعلیم سے اعلیٰ تعلیمی اداروں کی معلومات لیتا ہے اور اسے گوگل سرچ فلٹر کے طور پر لاگو کرتا ہے۔ کیا آپ نے کبھی انڈیانا کی تمام پبلک یونیورسٹیوں کی ویب سپیس کو تلاش کرنا چاہا؟ یا ملک کے تمام تاریخی طور پر سیاہ فام کالج اور یونیورسٹیاں (ایچ بی سی یوز)؟ یا شاید ٹیکسس کے تمام بیپٹسٹ ادارے؟ اب آپ کر سکتے ہیں. اس ٹول کے لیے مفت ڈیٹا ڈاٹ جی او وی اے پی آئی کی درکار ہے۔

 ایک سے زیادہ سماجی پلیٹ فارمز پر ایک سے زیادہ سیاست دانوں کے آؤٹ پٹ کو تلاش کریں: کانگریشنل سوشل میڈیا ایکسپلورر(سی ایس ایم ای)

امریکی اراکین کانگریس کے پاس سوشل میڈیا کے بہت سے آؤٹ لیٹس ہیں جہاں سے وہ بات کر سکتے ہیں، لیکن ان سب کو ایک ساتھ تلاش کرنا مشکل ہے۔ ٹھیک ہے، یہ ویسے بھی ایسے ہی تھا. سی ایس ایم ای ہر ممبر کی سوشل میڈیا سپیس کے لیے فوکسڈ گوگل کے سوالات پیدا کرنے کے لیے پرو پبلیکا اے پی آئی کا فائدہ اٹھاتا ہے۔ خاص طور پر، یہ گوگل کے سوالات پیدا کرے گا جو متعدد فیس بک اور ٹویٹر پوسٹس میں تلاش کرے گا اور ساتھ ہی کانگریس کے ہر رکن کی تصاویر اور ویڈیوز تلاش کرے گا۔ سوالات ایک وقت میں ایک ریاست میں پیدا ہوتے ہیں، 2011 سے اب تک کے سالوں کے لیے دستیاب ہیں، اور اس میں سینیٹ اور ایوان نمائندگان دونوں شامل ہیں۔

___________________________________________________________

تارا کیلیشین انٹرنیٹ پر چیزیں تلاش کرنے کے بارے میں کتابوں کی سب سے زیادہ فروخت ہونے والی مصنفہ ہیں، بشمول "گوگل ہیکس” اور "انٹرنیٹ ریسرچ کے لیے آفیشل نیٹ سکیپ گائیڈ۔” 1996 سے انہوں نے سرچ انجنز اور ڈیٹا بیسز کے بارے میں، اپنے بلاگ ، ریسرچ بز، 1998 میں لکھا۔ 2022 میں، انہوں نے جاوا سکرپٹ کے ساتھ سرچ ٹولز بنانا شروع کیے اور ایک نئی ویب سائٹ سرچ گزموس قائم کی۔

ہمارے مضامین کو تخلیقی العام لائسنس کے تحت مفت، آن لائن یا پرنٹ میں دوبارہ شائع کریں۔

اس آرٹیکل کو دوبارہ شائع کریں


Material from GIJN’s website is generally available for republication under a Creative Commons Attribution-NonCommercial 4.0 International license. Images usually are published under a different license, so we advise you to use alternatives or contact us regarding permission. Here are our full terms for republication. You must credit the author, link to the original story, and name GIJN as the first publisher. For any queries or to send us a courtesy republication note, write to hello@gijn.org.

اگلی کہانی پڑھیں

Rijksmuseum archive comparison Freibrug cathedral

رپورٹنگ تجاویز اور ٹولز طریقہ کار

پرانی تصاویر کی تحقیق کرنے کے لیے نئی ٹیکنالوجی اور آن لائن وسائل

پرانی تصویروں کی تحقیق کے لیے نئی ٹیکنالوجی اور آن لائن وسائل استعمال کرنے کے لیے تجاویز اور ٹولز۔ یہ جانیں کے یہ تصاویر کہاں کی ہیں، کب لی گئیں اور کس نی لیں؟

گوگل شیٹس کی بنیادی باتوں پر صحافیوں کے لیے مرحلہ وار گائیڈ

اسپریڈشیٹ کو استعمال کرنے کا طریقہ جاننا ایک اہم مہارت ہے، کیونکہ یہ آپ کو ڈیٹا کی بڑی مقدار میں ممکنہ کہانیاں تلاش کرنے اور اسے استعمال کرنے کے طریقے کے بارے میں تنقیدی انداز میں سوچنے کی اجازت دیتا ہے۔

جب آپ کے ملک کے رہنما صحافیوں کے مخالف ہوں: ارجنٹائن کے تحقیقاتی صحافی ہیوگو الکونڈا مون کی طرف سے بقا کے نقات

ارجنٹائن صحافتی تنظیم کے تحقیقاتی ایڈیٹر کو ملک کے سیاسی ہالوں میں زیادہ پسند نہیں کیا جاتا۔ یہاں انہوں نے کچھ نکات دیے ہیں کی مشکل سیاسی حالات میں اپنے آپ کو محفوظ رکھتے ہوئے صحافی تحقیقاتی کہانیاں کس طرح جاری رکھیں

Facebook privacy settings, online security jouranlists

جی آئی جے این ٹول باکس: جدید ترین — اور مفت — آن لائن تحقیقاتی ٹولز جو آپ ابھی آزما سکتے ہیں۔

امریکہ میں ہونے والے نائکار کانفرنس میں کچھ ایسے نئے ٹولز پیش کیے گئے جو صحافیوں کو حقائق کی جانچ پڑتال، موضوع کی بریفنگ، اور آن لائین رازداری برکرار رکھنے میں مدد کرتے ہیں۔ اس تحریر میں جی آئی جے این نے ان ٹولز کی فہرست بنا کر ان کے بارے میں مختصر معلومات فراہم کی ہے۔